لازوال محبت: یہ جوڑا 1600 سال سے ایک دوسرے کو آغوش میں لیے دفن ہے

بیجنگ:
چینی صوبے شانکشی کے شہر داتونگ سے دریافت ہونے والی 1,600 سال قدیم قبر میں مرد اور عورت ایک دوسرے کی آغوش میں اس طرح دفن ہیں کہ جیسے وہ مرنے کے بعد بھی ہمیشہ ساتھ رہنے کی قسم نباہ رہے ہوں۔

یہ قبر اس قدیم قبرستان کا حصہ ہے جو گزشتہ برس داتونگ میں کھدائی کے دوران برآمد ہوا تھا۔

یہاں جیلین یونیورسٹی اور شیامین یونیورسٹی کے ماہرین مشترکہ تحقیق کررہے ہیں، جن کا کہنا ہے کہ یہ قبر ’’توؤبا وی‘‘ کہلانے والے شاہی خاندان کے زمانے سے تعلق رکھتی ہے جو شمالی چین پر 386 عیسوی سے 534 عیسوی تک حکمران رہا تھا۔

ماہرین کا کہنا ہے کہ اس قبر میں دفن مرد کا قد 5 فٹ 4 انچ رہا ہوگا جبکہ مرتے وقت اس کی عمر 25 سے 35 سال کے درمیان تھی۔ عورت کا قد 5 فٹ 2 انچ تھا جبکہ اس کی عمر کا تخمینہ 35 سے 40 سال لگایا گیا ہے۔

مرد کا ایک بازو ٹوٹا ہوا ہے، ایک انگلی کا کچھ حصہ کٹا ہوا ہے اور ایک ٹانگ کی ہڈی بھی کچھ باہر کو نکلی ہوئی ہے۔ اس کے برعکس، عورت کے جسم پر کسی بھی طرح کا کوئی زخم یا پھر تشدد کا کوئی نشان موجود نہیں جس سے ظاہر ہوتا ہے کہ وہ صحت مند تھی۔

عورت اور مرد کے ہاتھ ایک دوسرے کی کمر پر ہیں جبکہ عورت نے مرد کے کندھے پر اپنا سر اس طرح رکھا ہوا ہے کہ جیسے آرام کررہی ہو۔

عورت کے بائیں ہاتھ کی درمیانی انگلی میں چاندی کی انگوٹھی بھی ہے جو ظاہر کرتی ہے کہ وہ اس شخص کی بیوی تھی؛ اور شاید اس نے شوہر کے مرنے پر اس کی آغوش میں دفن ہونے کا فیصلہ کیا تھا۔

اگرچہ اس قبرستان سے اب تک تقریباً 600 قبریں دریافت ہوچکی ہیں جن میں سے چند قبروں میں عورت اور مرد ایک ساتھ دفن ہیں لیکن یہ قبر اپنے انداز میں سب سے منفرد، محفوظ اور نایاب ہے۔

واضح رہے کہ اب تک دنیا بھر میں کئی مقامات پر ایسی درجنوں قدیم قبریں دریافت ہوچکی ہیں کہ جن میں مرد اور عورت ایک ساتھ دفنائے گئے ہوں، جبکہ یہ قبریں چھ ہزار سال تک قدیم ہیں۔

ماضی کی مختلف تہذیبوں میں شوہر کے مرنے کے بعد بیوی کو اس کے ساتھ زندہ دفن کرنے کی روایت رہی ہے جس کی باقیات آج بھی کچھ مذہبی عقائد کے علاوہ پسماندہ علاقوں میں موجود ہیں۔

چینی شہر داتونگ سے دریافت ہونے والی مذکورہ قبر کے بارے میں ماہرین نے اندازہ لگایا ہے کہ اس میں دفن عورت اور مرد کو دیکھ کر ایسا ہر گز نہیں لگتا کہ ان پر کسی بھی قسم کا کوئی تشدد کیا گیا ہوگا، بلکہ ان دونوں کو مکمل احتیاط اور پورے اہتمام سے دفن کیا گیا ہے۔

’’توؤبا وی‘‘ شاہی خاندان کے دورِ حکومت میں شمالی چین کے اس علاقے میں کئی نسلوں کے لوگ ایک ساتھ آباد تھے جن میں باہمی جنگ و جدل کے علاوہ عشق و عاشقی کے قصے بھی مشہور چلے آرہے ہیں۔

اس دریافت کی تفصیلات ’’انٹرنیشنل جرنل آف اوسٹیو آرکیالوجی‘‘ کے تازہ شمارے میں آن لائن شائع ہوئی ہیں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں